A Tribute to the Martyred

flagسلام کلکتہ کے ان پہلے گمنام شہیدوں کو جنہوں نے کلمہ پڑھنے کی پاداش میں اپنا لہو پاکستان کی بنیادوں میں ڈالا۔
سلام ان رات کو سفر کرنے مسافروں پر جن کے پاؤں پانی لگی فصلوں میں دن کو چھپنے سے گل گۓ۔
سلام ان عفت مآب خواتین پرجنہں نے مجھے میرا نام دینے کے لۓ اپنی عصمتیں لٹا دیں۔
سلام ان پردہ نشیں بیبیوں کو جنہوں نےسکھ بلوایوں کے ہاتھ آنے کی بجاۓ کلمہ پڑھتے ہوۓ کنوؤں میں چھلانگیں لگا دیں۔
سلام ان غیور نوجوانوں پر جو اپنے قافلوں کی حفاظت کرتے ہوۓ خون میں نہا گۓ۔
سلام ال ننھے شہیدوں پر جو میری خاطر اپنی ماؤں کے سامنے سنگینوں میں پرو دۓ گۓ۔
سلام ان ریل گاڑیوں کو جن کے مسافر منزل تک پہنچنے پر لاشیں کہلاۓ۔
سلام ان بیل گاڑیوں اور چھکڑوں کو جن کے مسافر خاک و خون میں اٹ گۓ۔
سلام ان سپہ سالاروں پر جنہوں نےاپنے آج میرے کل پر قربان کر دۓ۔
سلام ان 23 ایف سی کے سپاہیوں کو جووطن کی خاطر ذبح کر دۓ گۓ۔
سلام ان ارض وطن کے گمنام سپاہیوں پرجو اعزاز،تمغے،اور انعام کے بغیر میری حفاظت کے لۓسینہ سپر ہیں۔

سلام ان ننھے شہیدوں پر جو گھروں سے پڑھنے نکلے لیکن کبھی ماوؑں کے پاس لوٹ کر نہ آےؑ۔

سلام ان سب سپاہیوں پر جو برف پوش چوٹیوں پر میری حفاظت کے لیےؑ دن رات کھڑے ہیں۔

سلام ان سپوتوں پر جو اپنے سینوں پر گولیاں کھا کر میرے  پر سکون شب و روز کے ضامن ہیں۔

One Comment

Add a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *